نگاہ ساقی 

یک لمحہ صحبتِ غلام ِ محمد
بہتر ہے مجلسِ مسیحا وخضر سے

 

کسی کے درد دل کی مسیحائی کرنا
بہتر ہے ترے شبینہ الف شہر سے



جلوہ طور گر دیکھنا ہے تجھے
پیارے دل تو تھام لے زرا صبر سے



نگاہ ساقی ہوئی ہے مھرباں
ٓآج جی بھر کے تو پی لے امر سے

 

تو بھی سیکھ لے الفقرو فخری کی ادا
ملتی ہے دو جہاں کی شاہی فقر سے

 

رحمتوں کے در کھلے انوار کے انبار لگے
دیکھتا ہوں جس جہاں میں تیری نظر سے

 


Poetry By Zahid Ikram

Back to Index Page